in

مریم نواز کے گرد بھی گھیرا تنگ ہونے لگا۔۔ اب تک کا شرمناک ترین کیس کھل گیا

اسلام آباد (نیوزڈیسک) مریم نواز کے گرد بھی گھیرا تنگ ہونے لگا۔۔ اب تک
کا شرمناک ترین کیس کھل گیا،سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم
نواز کے میڈیا سیل کو کروڑوں روپے کی ادائیگیاں کرنے کی تحقیقات کا
باقاعدہ آغاز کر دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق معتبر ذرائع نے انکشاف
کیا کہ مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں اپوزیشن رہنماؤں کے خلاف استعمال
کئے جانے والے مبینہ طور پر مریم نواز کے سوشل میڈیا سیل کوپرائیویٹ
کمپنی ظاہر کر کے حکومتی سیکرٹ فنڈز سے کروڑوں روپے کی ادا ئیگیاں کی
گئیں ‘

جبکہ اس مقصد کے لئے نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے یونیورسٹی
لیول کے آئی ٹی ایکسپرٹ کی 60 رکنی ٹیم کو بھی خفیہ طور پر بھرتی کیا
جنہیں ایک لاکھ روپے ماہانہ تنخواہ کی ادائیگیوں کے ساتھ ساتھ دیگر
مراعات بھی فراہم کی جاتی تھیں۔قومی اخبار میں شائع رپورٹ کے مطابق گذشتہ
دور حکومت میں سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز کی سرپرستی
میں چلنے والے سوشل میڈیا سیل کا کام صرف اور صرف حکومتی کاموں کی
پروجیکشن، پاکستان تحریک انصاف اورپاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماؤں کے
خلاف طنزیہ کارٹون اور سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر منفی پراپیگنڈا کرنا
ہوتا تھا۔اس حوالے سے پاکستان تحریک انصاف اور دیگر رہنماؤں کی جانب سے
اکثر سوالات اُٹھائے جاتے تھے جبکہ مریم نواز کے میڈیا سیل کو قومی خزانے
سے تنخواہوں کی ادائیگی کا بھی انکشاف ہوا لیکن اس پر کوئی ایکشن نہیں
لیا گیا۔ذرائع کے مطابق حکومتی سیکرٹ فنڈز سے مریم نواز کے سوشل میڈیا
سیل کو کروڑوں روپے کی ادائیگیوں کے خلاف قومی سلامتی کے اداروں نے اب
تحقیقات کا باقاعدہ آغاز کر دیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق سوشل میڈیا سیل
نواز شریف کے دور حکومت کے پہلے تین سال وزیراعظم ہاؤس کے اندر موجود
تھا جہاں نوجوانوں پر مشتمل سوشل میڈیا ٹیم خفیہ طور پر کام کرتی رہی
تاہم اپوزیشن جماعتوں کی طرف سے مریم نواز کی مذکورہ ٹیم کو بے نقاب کئے
جانے کے مسلم لیگ ن کے آخری سال اسے وزارت اطلاعات کے ذیلی ادارے پریس
انفارمشن ڈیپارٹمنٹ( پی آئی ڈی ) میں شفٹ کر دیا گیا ، لیکن اس سیل کو
حکومت کے خفیہ فنڈز سے ادائیگیوں کا سلسلہ چلتا رہا۔قومی اخبار کی رپورٹ
میں بتایا گیا کہ مریم نواز کے سوشل میڈیا سیل نے محض حکومتی پروگراموں
کی عوامی سطح پر تشہیر کے لئے سرکاری وسائل کا بے دریغ استعمال کیا۔
ذرائع کے مطابق نگران حکومت کے قیام کے دوران مریم نواز کے اس سوشل میڈیا
سیل کو اسلام آباد سے لاہور منتقل کر دیا گیا تھا اور اس دوران 60 رکنی
ٹیم میں سے 50 لوگوں کو فارغ کر کے دس لوگوں کی خدمات جاری رکھیں گئیں
کیونکہ تب اس سوشل میڈیا سیل کو تنخواہوں اور دیگر مراعات کی ادائیگی ن
لیگ کی طرف سے کی جانا تھیں۔اس حوالے سے ایک یہ انکشاف بھی ہو کہ مریم
نواز کے میڈیا سیل میں موجود کئی لوگوں کو کانٹریکٹ پر ہونے کے باوجود
نوکری سے نکال دیا گیا اور کچھ لوگوں کو تو تنخواہوں کی ادائیگی بھی نہیں
کی گئی۔ ذرائع کے مطابق مریم نواز کے سوشل میڈیا سیل سے اپوزیشن کے خلاف
منفی پراپیگنڈہ کے لئے گرافکس ایکسپرٹس کی خدمات بھی حاصل کی جاتی تھیں،
سوشل میڈیا سیل کی یہ ٹیم پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کو
خصوصی طور پر پر ٹارگٹ کرتی تھی اور عمران خان سمیت کئی اہم شخصیات کے
مضحکہ خیز کارٹون بنا کر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کرنا بھی اس ٹیم کا ٹاسک
تھا ۔تاہم اب اس حوالے سے چونکہ تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے لہٰذا جلد
ہی اس کی تمام تر تفصیلات منظر عام پر آئیں گی جس سے معلوم ہو گا کہ
مریم نواز نے اپنے ذاتی سوشل میڈیا سیل کے لیے قومی خزانے سے کتنی رقم
تنخواہوں اور مراعات کی ادائیگی کی مد میں استعمال کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

غریب عوام کیلئے بڑی خوشخبری ۔۔ نوکیا نے بڑاہی شاندار اینڈ رائیڈ فون متعارف کرا دیا ۔۔ قیت اور خصوصیات نہایت زبردست

دور ِنبویؐ کا ایسا کنواں جس سے پانی کے علاوہ کروڑوں ریال کی آمدن بھی ہوتی ہے، مگر کیسے؟نبی کریم ﷺ کے جلیل القدر صحابیؓ کے نام سعودی حکومت سینکڑوں سال گزرنے کے بعد پانی اور بجلی کا بل آج بھی کیوں بھیجتی ہے، دلچسپ معلومات