in

ایک خاوند نے بیوی کو چار نصیحتیں کیں ۔

ایک خاوند نے بیوی کو چار نصیحتیں کیں ۔ کہ چار چیزوں کا خیال رکھنا ۔
پہلی بات یہ کہ مجھے آپ سے محبت ہے ۔اس لیے میں آپ کو بیاہ کر نکاح کر لے اس گھر میں لے کر آیا ہوں ، اگر مجھے آپ سے محبت نہ ہوتی تو میں کبھی آپ سے نکاح نہ کرتا۔آپ کو بیوی بنا کر گھر لانا اس بات کا ثبوت ہے کہ آپ سے محبت ہے ۔ انسان ہو فرشتہ نہیں ہوں اگر کبھی کوئی غلطی کو تاہی ہو جائے تو نظرانداز کر دینا ۔
دوسری بات مجھے ڈھول کی طرح نی بجانا ۔ اس نے کہا کہ کے مطلب ۔ اس نے بتایا کہ اگر کبھی میں غصے میں ہو تو میرے آگے بولنا مت ۔ کیونکہ اگر تم بولو گی میریاآگے یہ کچھ بھی کرو گی تو بات بگر جائے گی ۔
رسی کو اگر ایک طرف سے کھینچو تو کبھی نہیں ٹوٹے گی اگر دونوں طرف سے کھینچو تو ٹوٹ جائے گیْ ۔
تیسری بات ۔مجھ سے رازو دنیا کہ ہر بات کرنا لیکن کبھی کسی کے شکوہ شکایت مت کرنا ۔ جس طرح کہ ساس بہو کے گلے شکوے ۔اس بندہ مجبور ہو جاتا ہے اور نہ چاہتے ہوے بھی غلط قدم اٹھا لیتا ہے ۔
چوتھی بات ۔
دیکھنا دل ایک ہے یہ تو اس میں محبت ہو سکتی ہے یہ نفرت ۔ دووں چیزیں نہیں ہو سکتیں ۔ اگر میری کوئی بھی بات بری لگے تو مجھے سیدھا کہنا ۔ دل میں بات مت رکھنا ۔ کونکہ دل میں بات رکھنے سے شیطان وسوسے پیدا کرتا ہے اور اختلاف بڑھ جاتے ہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

ابا جان میں بھی آپ ہی کی اولاد ہوں۔

شادی اور محبت میں کیا فرق ہے ۔