in

آپ نے تو جہاز کو ٹیکسی بنایا ہوا ہے،1500 ارب دیں اور بدلے میں …چیف جسٹس کی ملک ریاض کو بڑ ی پیشکش

سپریم کورٹ آف پاکستان میں بحریہ ٹاؤن نظر ثانی کیس کی سماعت ہوئی۔وکیل علی ظفر نے کہا کہ نیک نیتی ثابت کرنے کے لیے عدالتی حکم پر 5 ارب روپے جمع کروائے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ 5 ارب روپے رضاکارانہ طور پر جمع نہیں کروائے گئے۔۔ملک ریاض نے عدالتی حکم کے تحت پیسے جمع کروائے۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آپ فیصلے میں یہ ثابت کر دیں کہ ہم سے کوئی غلطی ہوئی ہے ہم اپنا ہوم ورک کر کے بیٹھیں ہیں آپ وکیل عوام کے ہیں لیکن بیٹھے آپ بحریہ کے جہاز میں ہیں آپ نے تو جہاز کو ٹیکسی سمجھا ہوا ہے- وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ملک ریاض نے کہا ہے کہ ایک ہزار عرب میں کہا سے لاؤں

جس پر چیف جسٹس نے کہا آپ کی ورتھ پانچ ہزار عرب کی ہے آپ پندرہ سو عرب دے دیں اور ساری عمر نیکیاں کمائیں چیف جسٹس نے کہا کہ بحریہ انکلیو نے بہت ساری سرکاری اراضی گھیر رکھی ہے۔لوگوں کے سرکاری زمین پر گھر بھی بن چکے ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ سُنا ہے کہ بحریہ ٹاؤن اسلام آباد کی حد بندی بھی ہوئی ہے۔

ملک ریاض نے کہا کہ میرے پاس حلال کا پیسہ ہے حرام کا نہیں۔ جس پر چیف جسٹس نے جواب دیا کہ آپ کو کب کہا کہ پیسہ حرام کا ہے؟چیف جسٹس نے ملک ریاض کو ہدایت کی کہ آئندہ سماعت پر ایک ہزار ارب روپے کا بندوبست کر کے آئیں۔ ملک ریاض کا کہنا تھا کہ ایک ہزار ارب تو امریکہ کے پاس بھی نہیں ہو گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

قبضہ مافیا کے سرغنہ منشا بم کا اصل نام کیا 36 سالوں سے اس کے خلاف کیوں کوئی کاروائی نہیں کی گئی اور منشا ٹل سے منشا بم کا کیا تعلق

ہانگیر ترین کو لینے کے دینے پڑ گئے پہلے نہ اہل اور اب مستقل پابندی،لاہور ہائیکورٹ نے بڑ ا حکم سنا دیا